ایشیا فاؤنڈیشن کا احتساب لیب کے تعاون سے میرٹ ہوٹل میں "امن کو مل کر منانے” کے منصوبے کی اختتامی تقریب کا انعقاد

اسلام آباد (نمائندہ خصوصی)ایشیا فاؤنڈیشن کا احتساب لیب کے تعاون سے میرٹ ہوٹل اسلام آباد میں "امن کو مل کر منانے کے منصوبے کی اختتامی تقریب کا اہتمام کیا گیا جس میں ایشیا فاؤنڈیشن کے سینئر ایڈوائزر حارث قیوم نے بات کرتے ہوئے کہا کہ”جب ملک کی سول سوسائٹی مل کر کام کرتی ہے تو اس سے ہمیں یہ امید ملتی ہے کہ ہمارے سامنے ایک تعمیری مستقبل ہے،تقریب میں اعلیٰ سرکاری افسران، سول سوسائٹی کے نمائندوں، تعلیمی اداروں اور میڈیا کے نمائندوں نے شرکت کی، دی ایشیا فاؤنڈیشن کی پروگرامز کوآرڈینیٹر فروا رشید نے کہا کہ یہ پروجیکٹ ایشیا فاؤنڈیشن نے 2018 میں
پنجاب، کے پی کے اور سندھ میں بائٹس فار آل کے تعاون سے شروع کیا تھا۔

پائیدار ترقی کے لیے اقدام لیگل رائٹس فاؤنڈیشن اور احتسابی لیب جس کا مقصد معاشرے کے کمزور طبقات کے خلاف تشدد کو کم کرنا ہے۔ یہ قبل از وقت وارننگ میکانزم کو ادارہ جاتی بنانے اور پسماندہ آبادی کے لیے سپورٹ نیٹ ورکس کو مضبوط بنانے کے ذریعے حاصل کیا گیا تھا۔ انہوں نے مزید بتایا کہ پنجاب وومن پروٹیکشن اتھارٹی (PWPA)، ڈائریکٹوریٹ آف ہیومن رائٹس (DoHR)، محکمہ سماجی بہبود (SWD) سندھ اور نیشنل کمیشن فار ہیومن رائٹس (NCHR) اس منصوبے کے اسٹریٹجک پارٹنرز تھے,تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عبدالوحید شیخ، سیکرٹری سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ، پنجاب نے کہا کہ اس پراجیکٹ کے ذریعے جدید ترین ارلی وارننگ سسٹم (EWS) کو ڈیزائن اور لاگو کیا گیا ہے جس سے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی آرکائیونگ، بروقت ردعمل، تجزیہ اور مستقبل کی پالیسی سازی ممکن ہو سکے گی۔ اس نظام نے مقامی حکومتوں اور دیگر ریاستی اداروں کی شمولیت کو موثر ریفرل میکانزم اور تشدد کے متاثرین کی مدد کے قابل بنایا، تقریب میں ویمن یونیورسٹی صوابی، عبدالولی خان یونیورسٹی، یونیورسٹی آف ہری پور، فاطمہ جناح ویمن یونیورسٹی، یونیورسٹی آف اوکاڑہ، ایم این ایس یونیورسٹی آف ایگریکلچر ملتان، یونیورسٹی آف کراچی اور فیڈرل اردو یونیورسٹی آف آرٹس سائنس اینڈ ٹیکنالوجی سمیت پارٹنر تعلیمی اداروں کی طالبات نے بھی اپنے سفر کا اشتراک کیا۔

ان کی زندگیوں پر پروگرام کے سیکھنے اور اثرات کو انہوں نے حاضرین کو بتایا کہ ان کی متعلقہ یونیورسٹیوں میں "ٹوگیدر فار پیس” پراجیکٹ کے تحت قائم کیے گئے یوتھ پیس انکیوبیشن سینٹرز نے کیمپسز میں محفوظ ماحول کو فروغ دینے اور طلباء کی موثر اور ذمہ دار شہری بننے کی صلاحیت کو بڑھانے میں کس طرح اہم کردار ادا کیا ہے، آخر میں احتساب لیب کے پروگرام مینیجر فرحان خالد نے شرکاء کو بتایا کہ اکاؤنٹیبلٹی لیب نے اس پروجیکٹ کے تحت 8 سوشل انٹرپرائز آئیڈیاز کو بھی فنڈ فراہم کیا جس سے طلباء کو پائیدار طریقے سے مقامی مسائل کو حل کرنے کے لیے انٹرپرائز حل کو ڈیزائن اور پائلٹ ٹیسٹ کرنے کے قابل بنایا گیا، تقریب کا اختتام پارٹنر تعلیمی اداروں کے طلباء کی موسیقی اور تھیٹر پرفارمنس سے ہوا۔

متعلقہ آرٹیکلز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button